52

گوجرانوالہ میں غیر معیاری مہنگے داموں آٹے کی فروخت جاری، 20 کلو آٹے کاتھیلا 1100روپے میں بکنے لگا

گوجرانوالہ (اشتیاق علی کیانی )ضلع بھر میں شہری غیر میعاری ناقص آٹا مہنگے داموں کھانے پر مجبور طاقتور منافع خور مافیا نے ڈپٹی کمشنر کے احکامات ہوا میں اڑا دیے تفصیلات کے مطابق ضلع بھر میں آٹے اور گندم کی قیمتیں دعوئوں کے باوجود انتظامیہ کے قابو سے باہر ہو گئیں۔ذرائع کے مطابق مارکیٹوں میں گندم کی قیمت 1800 روپے فی من اور آٹے کے بیس کلو آٹے تھیلے کی قیمت 1100روپے سے بھی تجاوز کر گئی ہے جبکہ سرکارہ مقررہ نرخوںپرآٹے کی دستیابی ممکن نہیںشہر کے متعدد علاقوں میں آٹا نایاب ہوچکا ہے اگر کسی دکاندار کے پاس ہے تو وہ منہ مانگی قیمت وصول کرتا ہے اور آٹا کی کوالٹی بھی اتنی بری ہوتی ہے کہ پیٹ خراب ہوجاتا ہے ۔ شہریو ں کا کہنا ہے کہ ضلعی انتظامیہ اور محکمہ خوراک قیمتوں کو کنٹرول کرنے میں ناکام ہیں جبکہ قیمتوں میں اضافے نے انکی زندگیاں اجیرن کررکھی ہیں۔گندم اور آٹے کی قیمتیں بڑھنے سے عام آدمی کیلئے دو وقت کی روٹی کا بندوبست کرنا بھی محال ہوگیا ہے البتہ ترجمان ڈپٹی کمشنر کہتے ہیں کہ قیمتوں میں اضافہ کرنے والے عناصر کے خلاف قانونی کاروائیاں عمل میں لائی جارہی ہیں۔فلور ملز پر 20 کلو آٹے کا تھیلا 837 روپے جبکہ دیگر سیل پوائنٹس پر اور 860 روپے میں دستیاب ہے۔دوسری جانب فلور ملز مالکان کا کہنا ہے ہم مہنگے داموں گندم خرید کر سستا آٹا کیسے فروخت کریں اگر انتظامیہ نے گندم کی قیمتوں کو کنٹرول نہ کیا تو آئندہ آنے والے وقت میں آٹے کی قیمتوں میں مزید اضافہ بھی متوقع ہے جس سے حالات مزید کشیدہ ہوجائیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں