37

معروف بزم علم و ادب “ہم زبان” کے زیر اہتمام زوم لنک کے ذریعے پہلے عالمی ماں مشاعرے کا انعقاد


مکہ مکرمہ(ڈیلی پریس کانفرنس) مشاعرہ میں دنیا کے نو ممالک سے 25 شعراء نے اپنی منظوم کلام کے ذریعے ماں کے مقدس رشتے کو خراج تحسین پیش کیا۔ مشاعرے کی صدارت عالمی شہرت یافتہ شاعرہ ریحانہ روحی نے کی جبکہ نائب صدر کے فرائض کراچی سے تعلق رکھنے والی شاعرہ اور مصنفہ زیب النساء زیبی نے انجام دئیے۔مشاعرے کی نظامت کے فرائض ہم زبان کے صدر اور معروف شاعر ڈاکٹر محمد سعید فضل کریم بیبانی نے انجام دئیے۔
اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے صدر محفل محترمہ ریحانہ روحی نے بتایا کہ محض تین سال کی عمر میں انکی والدہ کا انتقال ہو گیا تھا اور آج بھی انکا دھندلا سا عکس اور انکی یادیں میری یادداشت میں محفوظ ہیں۔ انھوں نے اپنا کلام سنا کر سامعین کے دل گرما دئے۔ ہم زبان کے صدر ڈاکٹر محمد سعید کریم بیبانی نے کہا کہ اردو شاعری گل و بلبل کے تذکروں سے بھری پڑی ہے مگر ماں کی عظمت و رفعت پر بہت کم لکھا گیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ اس عظیم ہستی کو اردو ادب میں مناسب جگہ دی جائے جسکی وہ حقدار ہے۔ مشاعرے کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوئی۔ برمنگھم، انگلینڈ میں مقیم طالبہ آمنہ محمد علی نے بڑی خوش الحانی سے قرات کی جسکے بعد انھوں نے اپنے بھائی عثمان محمد کے ساتھ مل کر نعتیہ ترانہ سنایا۔اسلام آباد سے صوفیہ جبین اور وردہ نجم نے بھی رسول پاک صل اللہ علیہ وسلم کے حضور نذرانہ عقیدت پیش کیا۔ انکے بعد اسلام آباد سے ہی معروف مصنفہ فوزیہ عباس نے ماں کی عظمت کے حوالے سے مختصر مقالہ پیش کیا۔ مشاعرہ رات گئے تک جاری رہا اور شعراء نے جی بھر کے اپنا کلام سنایا۔ جن شعراء نے ماں کی مدحت سرائی میں حصہ لیا انکے نام یہ ہیں۔
کراچی سے صدر مشاعرہ ریحانہ روحی، نائب صدر زیب النساء زیبی، شگفتہ شفیق، ڈیرہ غازی خان سے ادبی تنظیم آنچل کی بانی ڈاکٹر نجمہ شاہین کھوسہ، لاہور سے رشیدہ دستگیر، سائرہ حمید تشنہ، کلور کوٹ سے منظر انصاری، سعودی عرب سے کئی ادبی تنظیموں کے روح رواں زمرد سیفی اور ہم زبان کے صدر ڈاکٹر محمد سعید کریم بیبانی، مانچسٹر، برطانیہ سے نغمانہ کنول، شکاگو سے دائرہ حمد و نعت کے صدر سید محسن علوی، ہم سخن شکاگو کے صدر رشید شیخ، غوثیہ سلطانہ، کینیڈا سے صالح اچھا، پروین سلطانہ صبا، رحمان خاور، جرمنی سے طاہرہ رباب الیاس، بھارت سے محشر فیض آبادی، ڈاکٹر شگفتہ غزل، احمد برقی اعظمی،ماہ نور، نور جمشید پوری، فوزیہ افسر ردا، چین سے ڈاکٹر محمد اعجاز کشمیری اور موزمبیق سے شاہد خاکی۔جدہ سے معروف صحافی مسرت خلیل جبکہ مکہ مکرمہ سے محمد عامل عثمانی بھی مشاعرے میں شریک رہے۔ مجلس عمل کے چیئرمین عامر خورشید رضوی نے بھی اس موقع پر خطاب کیا اور علامہ اقبال کی اپنی والدہ سے بے پناہ محبت کو اجاگر کیا۔ اورآخر میں مکہ مکرمہ سے محمد عامل عثمانی نے دعا کی خاص کرڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کے لیے خصوصی دعائیں کیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں