193

سرکاری حج اسکیم کااعلان،80سال سےزائدعمرکےلوگ قرعہ اندازی سےمستثنی قرار


سرکاری حج اسکیم
وفاقی وزارت مذہبی امور کی جانب سے سرکاری حج اسکیم کے دوسرے حصے میں17921 افراد کے ناموں کا اعلان کردیا گیا ہے، اسکیم کے تحت 80 سال سے زائد عمر والے افراد کو قرعہ اندازی سے مستثنیٰ قرار دیا گیا ہے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب میں وفاقی وزیر مذہبی امور سردار یوسف کا کہنا تھا کہ 10 فیصد سرکاری اسکیم کے تحت 587 عازمین حج پر جا سکیں گے، جب کہ نجی ٹور آپریٹرز کی 4500 شکایات کو نمٹا دیا گیا ہے، ڈالر ریٹ بڑھنے سے حکومت 4 ارب سے زائد رقم حاجیوں کے حصے کی خود ادا کرے گی۔
سردار یوسف نے پریس بریفنگ میں بتایا کہ وفاقی کابینہ کے فیصلے کے مطابق تین سال یا زائد بار درخواستیں دینے والے 12237 افراد کو اس سال کامیاب قرار دیا جارہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ 80 سال سے زائد عمر والوں کو بمعہ معاون 4928 بھی بغیر قرعہ اندازی میں کامیاب قرار دیا گیا ہے، 7 فیصد کوٹہ کا فیصلہ اگر وزارت کے حق میں آیا تو بقیہ 17562 کی قرعہ اندازی پھر ہوگی۔

انہوں نے بتایا کہ آج کی 10 فیصد سرکاری اسکیم میں قرعہ اندازی کے بعد ناکام رہنے والے بینکوں سے رقوم واپس لے سکتے ہیں، جو لوگ رقوم واپس لے لیں گے، انہیں اگلی 7 فیصد قرعہ اندازی میں شامل کریں گے۔ عازمین حج کے فنگرپرنٹس لینے کا کوئی حکم سعودی حکومت کی طرف سے وزارت مذہبی امور کو نہیں ملا، وزارت نے براہ راست اور وزارت خارجہ کے ذریعے فنگر پرنٹس کے استثنیٰ کی درخواست کی ہے، اس درخواست کا ابھی جواب نہیں ملا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں