37

” ڈرامہ میرے پاس تم ہو” کا خاتمہ اور دانش کی موت پر پاکستانی مایوس لیکن کہانی میں دراصل ہیرو کی جان ہی کیوں لی گئی؟ بالآخر ڈرامے کے رائٹر نے خاموشی توڑدی


کراچی(ڈیلی پریس کانفرنس)پاکستان کے مقبول ترین ٹی وی ڈرامہ سیریل ”میرے پاس تم ہو“ پر تبصروں کا سلسلہ ابھی بھی جاری ہے،لوگوں کی بڑی تعداد ڈرامے میں دانش کی موت کے حوالے سے تبصرے کررہی ہے۔کئی لوگوں نے مصنف خلیل الرحمان اس فیصلے کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے کہ انہوں نے دانش کو کیوں مارا؟لوگوں کی اس الجھن کو دور کرنے کیلئے خلیل الرحمان قمر اب خودمیدان میں آگئے ہیں،ناظرین کو دانش کو ڈرامے میں مارنے کی وجہ بتادی۔ایک ٹی وی انٹرویو میں خلیل الرحمان نے کہا دانش اپنی زندگی میں مہوش کے علاوہ کسی اور عورت کو جگہ نہیں دے سکتا تھالیکن اپنی موت کے بعد وہ اس مشکل سے آزاد ہوگیا۔ڈرامے میں مہوش کو زندہ رکھنے کی وجہ بتاتے ہوئے خلیل الرحمان نے وضاحت کی کہ وہ چاہتے تھے کہ مہوش پچھتاوے کی زندگی گزارے۔یاد رہے اے آروائی ڈیجیٹل کے اس ڈرامہ سیریل نے مقبولیت کے نئے ریکارڈز قائم کئے ہیں۔ کچھ ڈائیلاگز کی وجہ سے اس ڈرامے کو خواتین مخالف بھی قراردیاگیا ہے تاہم تنقید بھی اس ڈرامے کی مقبولیت کم نہیں کرسکی۔ ڈرامے کی آخری قسط ہفتے کے روز سینما گھروں میں دکھائی گئی توکئی سینماوں میں ہاوس فل کے بورڈ لگ گئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں