68

رمضان المبارک کے دوران مسجد نبوی ﷺ میں افطار دستر خوان نہ لگانے کا فیصلہ


ریاض (ڈیلی پریس کانفرنس) مسجدِ نبوی صلی الله عليه وآلہ وسلم میں رمضان المبارک کے دوران افطار دستر خوان نہیں لگیں گے، مسجد کی انتظامیہ کی جانب سے اعلان کر دیا گیا ہے. مسجدِ نبوی ﷺ کی انتطامیہ نے اطلاع دی ہے کہ امسال رمضان کے دوران مسجد نبویﷺ میں افطار دستر خوان نہیں لگائے جائیں گے، یہ فیصلہ کورونا وائرس سے بچنے کے لیے احتیاطی تدبیر کے طور پر کیا گیا ہے.مسجد نبوی شریفﷺ کی انتظامیہ نے افطار دستر خوان لگانے والوں کے نام اپنے پیغام میں کہا ہے کہ ’ہمیں احساس ہے کہ آپ حضرات خیر و برکت کے مہینے میں اجر و ثواب کی نیت سے روزہ داروں کو افطار کروانے کے لیے دستر خوان کا اہتمام کرتے ہیں مگر اس سال کے ماہِ رمضان کے دوران مسجد نبویﷺ میں افطار دستر خوان کا پروگرام عارضی طور پر معطل کردیا گیا ہے، یہ فیصلہ کورونا کی وباء سے پیدا ہونے والے حالات کو مدنظر رکھ کر کیا گیا ہے‘.یاد رہے سعودی عرب میں ماہ رمضان المبارک میں مسجد نبوی الشریفﷺ اور حرمِ مکی میں لوگوں کو افطاری کروانے کے لیے بڑے پیمانے پر مخیر افراد کی جانب سے انتظام کیا جاتا ہے، حرمین کی انتظامیہ کی جانب سے افطار دسترخوان کے لیے مروجہ قانون کے تحت اجازت حاصل کرنا لازمی ہوتی ہے جس کا اندراج ماہِ شعبان کے آغاز سے ہی کردیا جاتا ہے، اجازت نامے کے بغیر مسجد نبویﷺ کے اندرونی صحنوں میں افطاری درسترخوان نہیں لگایا جا سکتا، مسجد نبوی الشریفﷺ کے اندرونی صحن میں افطاری کروانے کے لیے مخصوص اشیا جن میں کھجور، قہوہ، دہی یا لسی اور مخصوص روٹی جسے ’شریک‘ کہا جاتا ہے کی ہی اجازت ہوتی ہے جبکہ مسجد نبوی الشریف ﷺ کے بیرونی صحنوں میں دیگر اشیاء لانے کی اجازت ہوتی ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں